Ishrat ul Ebad will Return Karachi Very Soon | Nabeel Gabol

59

سینئرسیاستدان نبیل گبول کا کہنا ہے کہ بانی متحدہ قومی موومنٹ کا باب بند ہوچکا ہے‘ بہت جلد عشرت العباد کراچی کے سیاسی انتشار کو کنٹرول کرنے کے لئے پاکستان واپس آجائیں گے۔

اے آروائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ مسلم لیگ پاناما کیس جیتے یا ہارے قبل ازوقت انتخابات کرائے گی ‘ اگلے مہینے سے وہ لیاری سے انتخابات کے لیے سیاسی سرگرمیوں کا آغاز کریں گے۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے سابقہ سینئر راہنما سردار نبیل احمد خان گبول، سردار خان احمد خان گبول کے بیٹے ہیں. ذوالفقارعلی بھٹو کے قریبی ساتھی اور پیپلزپارٹی کے بانی رُکن بیرسٹر عبدالستار گبول آپ کے چچا تھے ۔

اُن کے دادا سردار خان بہادر اللہ بخش گبول تقسیمِ ہند سے پہلے کی سندھ اسمبلی کے ’’ ڈپٹی اسپیکر ‘‘ رہےاور کراچی کے دومرتبہ میئربھی۔ تحریکِ پاکستان میں سرداراللہ بخش گبول کا بڑا مثبت کردار رہا ۔ اُن کے والد خان احمد خان گبول اورچچا عبدالستار گبول نےپاکستان کی سیاست میں بڑا فعال کردار ادا کیا۔

اُنھوں نے 24 سال کی عمر میں سیاسی کیریئر کا آغازپاکستان پیپلزپارٹی سے کیا۔ اَب تک مسلسل پانچ مرتبہ وہ پاکستان پیپلزپارٹی کے لیے اور ایک مرتبہ ایم کیوایم کے لیے سیٹ جیت چکے ہیں۔ ممبر قومی و صوبائی اسمبلی منتخب ہونے کے علاوہ اُنہیں سندھ کے کم عمرترین ڈپٹی سپیکرہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے۔

اے آر وائی نیوز: آپ نے تا حال کسی سیاسی جماعت میں شمولیت اختیار نہیں کی‘ اس کی کیا وجہ ہے ؟

نبیل گبول: فی الحال کوئی ایسی سیاسی جماعت میری سمجھ میں نہیں آ رہی ہے جس کو میں جوائن کروں۔ ہو سکتا ہے میں عنقریب پیپلزپارٹی یا تحریک انصاف میں شمولیت کرلوں۔ اس سلسلے میں میں ابھی سوچ رہا ہوں‘ تاحال کوئی حتمی فیصلہ نہیں کیا ہے۔

اے آر وائی نیوز: پانامہ لیکس کیس کس سمت میں جا رہا ہے ؟

نبیل گبول: مجھے پانامہ لیک کی سمت نواز شریف کے حق میں بہتر نظرآرہی ہے۔ دیکھیں پانامہ لیکس کا فیصلہ عوام کو کرنا چا ہیے۔
دنیا بھرمیں عوام گھر وں سے نکلے ہیں اور اپنے عہد ے داروں سے استعفی طلب کیے ہیں. انصاف کے حصول کے لئے عوام کو سٹرکوں پر آنا ہوگا۔

اے آر وائی نیوز: عوام کو سٹر ک پر لا کر ہی تو پانامہ کیس عدالت تک پہنچا‘ آپ کے مطابق پانامہ کی سمت نواز حکو مت کے حق میں ہے تو کیا اب کی بارآپ عوام کے ساتھ سراپا احتجاج ہوں گے ؟

نبیل گبول: دیکھیں کسی بھی سیاسی جماعت کو الیکشن جیتنے کے لئے کوئی سلو گن لے کرچلناہوتا ہے۔ میں سمجھتا ہوں تحریک انصاف پانامہ لیکس کے فیصلے کے بعد دوبارہ لوگوں کو سڑکوں پرلا ئیں گے لیکن میں عمران خان کو مشورہ دوں گا کہ جب تک الیکشن کمیشن غیرجانب دارنہیں ہو گا‘ کوئی مثبت اقدام نہیں ہونے والا ہے۔ لہذا ان کو الیکشن کمیشن کو غیرجا نب دار اورووٹ کے عمل کو شفاف بنانے کے لئے عوام کو سڑ کوں پر لانا ہو گا. ورنہ ایک بار پھر ظالم حکمران قوم کا مقدر بنیں گے۔