View RSS Feed

Fawad Afzal

مقامی اخبار کے خلاف جہانگیر صدیقی اور جے ا&#17

Rate this Entry
Quote Originally Posted by Fawad Afzal View Post
مقامی اخبار کے خلاف جہانگیر صدیقی اور جے ایس بنک کی درخواست، سندھ ہائیکورٹ نے مدعا علیہان سے ایک ہفتے میں جواب طلب کرلیا
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائیکورٹ کے جسٹس عزیزالرحمٰن پر مشتمل بنچ نے جہانگیر صدیقی اور جے ایس بنک کے خلاف من گھڑت، بے بنیاد اور جھوٹی خبریں شائع کرنے پر مقامی اخبار (امت پبلیکیشن) پرنٹر و پبلشر (رفیق افغان) کے خلاف دائر درخواست کی سماعت کرتے ہوئے مدعا علیہان کو درخواست و دیگر دستاویزات کی نقول فراہم کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں اور مدعا علیہان سے ایک ہفتے میں جواب طلب کرلیا ہے۔ منگل کو سماعت کے موقع پر امت پبلیکیشن اور رفیق افغان کے وکیل خواجہ نوید احمد عدالت کے روبرو پیش ہوئے اور موقف اختیار کیا کہ انہیں درخواست اور دیگر دستاویزات کی نقول نہیں ملیں، لہٰذا انہیں نقول فراہم کی جائیں جس پر عدالت نے حکم دیا کہ مدعا علیہان کو نقول دی جائیں اور وہ ایک ہفتہ میں جواب داخل کریں۔ قبل ازیں درخواست گزاران جہانگیر صدیقی اور جے ایس بنک نے امت پبلیکیشن اور پرنٹر و پبلشر رفیق افغان کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ درخواست گزاران کاروباری لین دین میں اچھی ساکھ رکھتے ہیں مگر کچھ عرصہ سے مدعا علیہان نے ان کے اور ان کے کاروبار سے منسلک افراد کے خلاف من گھڑت مہم کا آغاز کررکھا ہے جس میں ان کے خلاف بے بنیاد، جھوٹی اور من گھڑت خبریں شائع کی جارہی ہیں۔ اس بدنیتی پر مبنی مہم کے خلاف درخواست گزاران نے مدعا علیہان سے رابطہ کیا اور ان بے بنیاد خبروں کی تردید بھیجیں مگر مقامی اخبار نے ان کی کسی تردید کو بھی شائع نہیں کیا۔ اس کے علاوہ درخواست گزاران نے مدعا علیہان کو ای میل، ٹیلیفون اور دیگر ذرائع سے رابطہ کرکے اپنا موقف پیش کیا مگر مدعا علیہان نے درخواست گزاران کا موقف نہیں شائع کیا۔ اس جھوٹی اور بدنیتی پر مبنی مہم سے درخواست گزاران کی شہرت کو شدید نقصان پہنچ رہا ہے اور مالی نقصان کے علاوہ ذہنی اذیت کا باعث بھی ہے۔ لہٰذا مدعا علیہان کو حکم دیا کہ درخواست گزاران کی شہرت اور کاروبار کو نقصان پہنچانے پر 10 ارب ادا کئے جائیں اور مدعا علیہان کو درخواست گزاران کے خلاف بے بنیاد، جھوٹی، من گھڑت خبریں شائع کرنے سے روکا جائے۔ گذشتہ سماعت کے موقع پر عدالت نے درخواست کی سماعت کرتے ہوئے مدعا علیہان کو درخواست گزاران کے خلاف من گھڑت، جھوٹی اور بے بنیاد خبریں شائع کرنے سے روک دیا تھا۔
http://beta.jang.com.pk/<wbr>NewsDetail.aspx?ID=173748














Submit "مقامی اخبار کے خلاف جہانگیر صدیقی اور جے ا&#17" to Digg Submit "مقامی اخبار کے خلاف جہانگیر صدیقی اور جے ا&#17" to del.icio.us Submit "مقامی اخبار کے خلاف جہانگیر صدیقی اور جے ا&#17" to StumbleUpon Submit "مقامی اخبار کے خلاف جہانگیر صدیقی اور جے ا&#17" to Google

Tags: None Add / Edit Tags
Categories
Uncategorized

Comments